ہفتہ , ستمبر 21 2019
Home / پاکستان / تھر میں گندم کی تقسیم پر اسیمبلی میں سوال

تھر میں گندم کی تقسیم پر اسیمبلی میں سوال

کراچی (اسٹاف رپورٹر ) صوبائی وزیر ریونیو مخدوم محبوب الزماں نے کہا ہے کہ تھر میں خشک سالی سے متاثرہ افراد میں گندم کی شفاف طریقے سے تقسیم ہورہی ہے اور نادرا کے سسٹم کی نشاہدہی کے بعد ہر متاثرہ خاندان کو گندم دی جارہی ہے۔ یہ بات انہوں نے جمعرات کو سندھ اسمبلی کے اجلاس کے دوران رکن صوبائی اسمبلی رزاق راہموں کے ایک توجہ دلاﺅ نوٹس کے جواب میں کہی.

رزاق راہموں کا کہنا تھا کہ 50 کلوکے بیگزمیں 35 کلوگندم دی جارہی ہے، تھرکے لوگوں کو بھکاری بنادیا گیا ہے۔ اس سلسلے میں تحقیقات کی جائیں۔

انہوں نے کہا کہ ڈپٹی کمشنر تھرپارکرسے بھی شکایت کی گئی مگر کوئی تدارک نہیں کیا گیا۔

وزیر ریونیو نے کہا کہ ریلیف کمشنر خود تھرمیں موجود ہیں اور اس سلسلے میں جو کہا جارہا ہے وہ حقائق پر مبنی نہیں۔ گندم پورے وزن کے ساتھ دی جارہی ہے اورریلیف کمشنر خود نگرانی کررہے ہیں۔

پی ٹی آئی کی خاتون رکن ڈاکٹر سیما ضیاء نے اپنے توجہ دلاﺅ نوٹس کے ذریعے نشاندہی کی کہ ماڑی پورروڈ کی حالت قابل رحم ہے. ملک میں سوئی دھاگا بھی اسی روڈ سے گذرکر جاتا ہے، سمندرجانے والے اس روڈ کا استعمال کرتے ہیں، حکومت سندھ روینیو لیتی ہے حکومت اس روڈ کی مرمت کی تاریخ دے۔

صوبائی وزیر سید ناصر حسین شاہ نے کہا کہ ماری پورروڈ، ورکس اینڈ سروسز کی نگرانی میں نہیں آتا، روڈ کی حالت نالے کی وجہ سے خراب ہوئی ہے، وزیراعلی نے آئندہ ترقیاتی کاموں میں اس روڈ کو بھی شامل کیا ہے ،جلد بہتر بنایا جائیگا.

Check Also

تھر کول پاور پروجیکٹ کے تحت سستی ترین بجلی بنے گی

تھر کول پاور پروجیکٹ سے سستی ترین بجلی بنے گی

محمد واحد توانائی بحران سے نمٹنے والے منصوبے تھرکول پاور پروجیکٹ سے بجلی کی پیداوار …