ہفتہ , ستمبر 21 2019
Home / اہم خبریں / میلاد کے مختلف رنگ- دنیا بھر سے
Roza-e-Rasool
Roza-e-Rasool

میلاد کے مختلف رنگ- دنیا بھر سے

ضحیٰ مرجان

ربیع الاہلول کا مہینہ شروع ہوتے ہی عالم اسلام میں ایک پر کیف پر نور جشن کا سا سماں بندھ جاتا ہے اور اس ماہ نور کو پوری دنیا کے مسلمان آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم کی پیدائش کی نسبت سے ایک جشن کے طور پر مناتے ہیں۔

گو کہ نبی کریم ﷺ کی تاریخ پیدائش کے متعلق مختلف روایات ملتی ہیں لیکن پوری دنیا کے مسلمان 12 ربیع الاول کو سرکار دو عالم رہبر معظم سرور کائنات محمد ﷺ کی پیدائش کے طور پر مناتے ہیں۔

پیارے آقا ﷺ کی پیدائش کے دن کو مختلف ممالک میں مختلف ناموں سے جانا جاتا ہے، پاکستان میں اسے میلاد کہا جاتا ہے۔ اکثر مسلمان سنی، شیعہ اور دیگر مکاتب فکر کے لوگ اس دن کو مذہبی تہوار کی صورت انتہائی عقیدت و احترام، جوش و جذبے کے ساتھ مناتے ہیں۔ جو کہ اب ہماری ثقافت کا حصہ بن چکا ہے۔

اس دن لوگ روزہ رکھتے ہیں، عوامی جلوس نکالے جاتے ہیں، نعت خوانی، ذکر و درود کی محافل کا انعقاد، صدقہ و خیرات،سماجی اجتماعات کے ساتھ ساتھ گھر گھر اور گلی محلے کو سجایا جاتا ہے۔ یہ جشن رحمت اللعالمین کے اس دنیا میں آنے کی خوشی اور تشکر کے طور پر منایا جاتا ہے۔ اس موقعی پر دنیا کے مختلف ممالک میں خطے اور علاقائی ثقافت کی نسبت سے عقیدت کے اظہار اور جشن منانے کے طریقے بھی مختلف ہوتے ہیں۔

پاکستان
پیارے وطن پاکستان میں ماہ نور کا چاند نظر آتے ہی ایک پر کیف سماں بندھ جاتا ہے۔ گھر، محلے، گلی کوچے الغرض ہر جگہ کو برقی قمقموں سے سجایا جاتا یے۔ نعتیہ محافل کا انعقاد کیا جاتا ہے، جس میں درود و سلام کے نذرانے بارگاہ اقدس میں پیش کئے جاتے ہیں۔ اور ذکر مصطفیٰ ﷺ سے روحانی و قلبی تسکین حاصل کی جاتی ہے۔ روزے رکھے جاتے ہیں اور غریبوں میں خیرات تقسیم کی جاتی ہے۔ یوں تو چاند دیکھتے ہی مجالس و محافل کا انعقاد کیا جاتا ہے لیکن 12 ربیع الاول کا جشن دیکھنے سے تعلق رکھتا ہے۔

اس دن سرکاری طور پر ملک بھر میں عام تعطیل ہوتی یے۔ لوگ مذہبی احترام کے ساتھ یہ دن مناتے ہیں۔ پاکستان میں رواداری کا فروغ دینے کے لئے جہاں مسلمان اقلیتوں کے مذہبی تہواروں میں شرکت کرتے ہیں وہیں اقلیتیں بھی رحمۃ للعالمین محمد بن عبداللہ ﷺ کے اس دنیا میں آنے پر مسلمانوں کی خوشی میں برابر شریک ہوتے ہیں۔

جنوبی افریقہ
جنوبی افریقہ کے لوگ میلاد محمد صلی ﷺ کسی تہوار کی طرح مناتے ہیں۔ خواتین نئے رنگین کپڑے زیب تن کرتی ہیں۔ یہاں لوگ صبح ہوتے ہی مرکزی اجتماع میں پہنچتے ہیں۔ ثناء خوانی کرتے ہیں، آنحضرت ﷺ پر سلامتی بھیجتے ہیں۔ خوشی کے اظہار کے لئے لیموں نارنگی اور گلاب کے پھولوں کی پتیوں کو کپڑے کے ایک چھوٹے سے ساشے میں ڈال کر ایک دوسرے کو تحفتاً پیش کرتے ہیں۔

سری نگر، جموں کشمیر
سری نگر کے لوگ محمد بن عبداللہ ﷺ کی آمد کی خوشی میں خصوصی عبادات کا اہتمام کرتے ہیں۔ لوگ بڑی تعداد میں جامع مسجد کا رخ کرتے ہی آقائے دو عالم ﷺ کی اسوہ حسنہ ، ان کی طرز زندگی اور ان کی تعلیمات کو یاد کرنے کے ساتھ ثناء خوانی کرتے ہوئے نذرانہ عقیدت پیش کرتے ہیں۔

اس دن سری نگر کی مشہور مزار آستانہ عالیہ درگاہ حضرت بل پر خاتم النبیین ﷺ کے موئے مبارک کی زیارت کروائی جاتی ہے۔ جس کی زیارت کا شرف حاصل کرنے کے لیے لوگوں کی ایک بڑی تعداد درگاہ حضرت بل شریف کا رخ کرتی ہے۔ جہاں عقیدت کے اظہار کے لئے روایتی شیرینی بھی تقسیم کی جاتی ہے۔

مصر
ولادت محمد مصطفیٰ ﷺ پر مصر میں سرکاری سطح پر عام تعطیل ہوتی ہے، جسے مذہبی تعطیل کے طور پر منایا جاتا ہے۔ اس دن لوگ پیدل مارچ کرتے ہوئے راستے میں درود و سلام پڑھتے ہوئے مٹھائیاں تقسیم کی جاتی ہیں اور مقررہ منزل پر پہنچا جاتا ہے۔ لیکن سب سے دلچسپ امر یہ ہے کہ اس دن بچوں میں ایک خاص قسم کی ٹافی (مٹھائی) تقسیم کی جاتی ہے، جسے عروستہ المولد کہا جاتا ہے، جو کہ ایک خوب صورت گڑیا کی شکل کی ہوتی ہے۔ اس دن غریبوں کا خیال رکھتے ہوئے کپڑے اور کھانے پینے کی اشیاء تقسیم کی جاتی ہیں۔ اور بچوں کو تحفتاً کھلونے دیے جاتے ہیں۔

فلسطین
عالم اسلام کی سب سے بڑی خوش قسمتی کے اس دن کو فلسطین میں بڑے پیمانے پر منایا جاتا ہے۔ یہاں میلاد النبی ﷺ کی مرکزی تقریب مسجد اقصیٰ کے قریب منعقد کی جاتی ہے۔ فلسطینی گلیوں میں نکل کر جلوس کی صورت میں وجہ کائنات صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی ذات وصفات کو نعتیہ انداز میں گنگناتے ہوئے مرکزی تقریب میں پہنچتے ہیں۔ ایک دوسرے کو مٹھائیاں دی جاتی ہیں اور بچوں کے لئے خاص قسم کی شیرینی بنائی جاتی ہے۔

آمریکا
میلاد مصطفی صلی ﷺ ناں صرف مسلم ممالک بلکہ آمریکا میں بھی مذہبی عقیدت کے ساتھ منایا جاتا ہے۔ یہاں گھروں اور دیگر مقامات پر مختلف مجالس کا انعقاد کیا جاتا ہے جہاں درود و سلام اور تلاوت کلام پاک کا اہتمام کیا جاتا ہے۔ اس کے ساتھ ہی یہاں مقیم مسلمان اسلامک سینٹر میں جمع ہوتے ہیں حضور اقدس ﷺ کی بارگاہ میں گلہائے عقیدت پیش کرتے ہیں اور سب مل کر کھانا کھاتے ہیں۔

ترکی
صوفیانہ رقص کے حوالے سے مشہور مشرقی و مغربی تہذیب کے امتزاج ترکی کے لوگ بھی جناب محمد مصطفیٰ ﷺ سے محبت کے اظہار میں پیچھے نہیں. میلاد النبی ﷺ کی نسبت سے جہاں سماجی اجتماعات کا اہتمام کیا جاتا ہے وہیں شمس تبریزی اور مولانا رومی کی پیروی کرتے ہوئے درویش گول گول گھومتے ہوئے رقص پیش کرتے ہیں۔ جو کہ ان کے مسلک میں عبادت کا درجہ رکھتا ہے۔

لبنان
دنیا کے مختلف خطوں میں مختلف ثقافتیں پائی جاتی ہیں اور ثقافت کا اثر خوشی اور دکھ کے اظہار پر بھی پڑتا ہے۔ اسی طرح لبنان کی علاقائی ثقافت میں خوشی کا اظہار کرنے کا انداز بالکل منفرد ہے۔ یہاں کے لوگ 12 ربیع الاول کو طبل بجاتے ہوئے شاہراہوں سے جلوس کی صورت نعتیہ اشعار پڑہتے ریلی نکالتے ہوئے مقررہ منزل پر پہنچتے ہیں اور ایک سیخ نما لمبی سوئی سے اپنا منہ چھیدتے ہیں جو ان کے گالوں سے آر پار نکل جاتی ہے۔

یمن
یمنی لوگ عشق محمد ﷺ کے اظہار اور نذرانہ عقیدت پیش کرنے کے لئے جوق در جوق یمن کے فٹ بال اسٹیڈیم کا رخ کرتے ہیں جہاں مرکزی تقریب کا انعقاد کیا جاتا ہے اور یوم پیدائش سرور کائنات ﷺ کا جشن منانے کے لئے بہت بڑی ریلی نکالی جاتی ہے۔ تا حد نگاہ لوگ ہی لوگ سر پر لبیک یا رسول اللہ ﷺ کی پٹیاں باندھے ثناء خوانی کرتے ہیں۔

ملائشیا
ملائشیا میں اس دن کو ایک تہوار کی طرح مناتے ہیں۔ سب لوگ زرق برق رنگین کپڑے زیب تن کرتے ہیں۔ تلاوت کلام پاک اور نعتیہ محافل کا انعقاد کیا جاتا ہے۔

بھارت
پڑوسی ملک بھارت میں بھی یہ دن احترام کے ساتھ منایا جاتا ہے۔ اس دن خصوصی عبادات کا اہتمام کیا جاتا ہے۔ نوافل ادا کرنے کے ساتھ ثناء خوانی اور خیرات تقسیم کی جاتی ہے۔ اس کے علاؤہ دنیا کے دیگر ممالک اور خطوں میں بھی یہ دن ایک محترم تہوار کی طرح منایا جاتا ہے۔

سعودی عرب
آنحضرت ﷺ کی پیدائش کے خطہ عرب میں اس دن کوئی تقریبات منعقد نہیں ہوتیں اور نہ ہی اس دن کو سرکاری سطح پر منایا جاتا ہے۔ سعودی میں اس دن معمولات زندگی حسب معمول ہی رہتے ہیں ۔ اور لوگ مقررہ وقت پر کاروبار زندگی شروع کرتے ہیں۔

Check Also

ورلڈ کپ میں بھارت سے شکست کی ابتدا عمران خان کے دور سے ہوئی

محمد واحد پاکستان کی بھارت کے ہاتھوں ورلڈکپ میں ہارنے کی روایت نہ ٹوٹ سکی …